Islamic

شیطان کے شر اوروسوسوں سے حفاظت کیلئے

امید کرتے ہیں کہ آپ خیریت سے ہوں گے. ہماری دعا بھی ہے کہ اللہ کریم آپ کو اپنے سائے میں رکھے. دوستوں خالق کائنات نے کچھ چیزوں کو اختیار دیا ہے کہ وہ اپنی مرضی سے اپنے ارادے سے اپنے راستے کو متعین کریں. خدا نے اختیار دیا ہے معرفت کے وسائل دیے ہیں. ہدایت کرنے کے وسائل دیے ہیں اور پھر اختیار دیا کہ تمہاری مرضی جس طرح انسان کو خدا نے پیدا کرنے کے بعد اسے ارادہ اختیار عطا فرمایا اور فرمایا کہ ہم نے انسان کو راستہ دکھا دیا ہے اسے معرفت دے دی ہے۔
حق اور باطل کی پہچان اسے دینی ہے. اب اس کی مرضی ہے کہ اب وہ تو حق کو قبول کر لے شکر گزار بن جائے. اور چاہے تو حق کا انکار کر کے باطل کو مان کے ناشکرہ بن جائے اور شیطانی کام کرے. کیونکہ شیطان انسان کا دشمن ہے تو اس کے شر محفوظ رہنے کے لیے ہر طرح کی آفات و بلیات سے محفوظ رہنے کے لیے برے وسوسوں اور برے خیالات سے محفوظ رہنے کے لیے قرآن پاک کی سورہ مومنون کی آیت نمبر 97 ہے. آپ بھی اس آیت کو یاد کر لیجیے. وہ آیت ہے.
وَقُل رَّبِّ اَعُوۡذُ بِكَ مِنۡ هَمَزٰتِ الشَّيٰطِيۡنِۙ‏ ﴿۹۷﴾
رسول صلی اللہ علیہ والہ وسلم کو یہ حکم دیا گیا کہ وہ شیطان سے پناہ مانگے اس کے شر سے خدا کی پناہ مانگے. ہم تو معمولی انسان ہیں دوستوں نبی کو حکم دیا جا رہا کہ وہ شیطان سے پناہ مانگے. تو ہم تو معمولی ہیں۔ ہمیں تو ہر وقت اس ملعون دشمن سے ضرور پناہ مانگنی چاہیے. لہذا اس مختصر دعا کو ضرور یاد کر لیجیے۔ جب بھی برے وسوسے آئیں جب بھی برے خیالات آئیں. اس دعا کو ایک دو مرتبہ یا تین مرتبہ لازمی پڑھ لیجیے. انشاءاللہ اللہ رب العزت شیطان کے شر سے بھی آپ کی حفاظت فرمائیں گے. برے خیالات اور وسوسوں سے بھی آپ کی حفاظت فرمائیں گے.

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button