Sports

گوادر کرکٹ سٹیڈیم کی خوبصورتی آئی سی سی بھی تعریف کرنے پر مجبور

گوادر کرکٹ سٹیڈیم کی خوبصورتی آئی سی سی بھی تعریف کرنے پر مجبور. گوادر کرکٹ سٹیڈیم کی خوبصورتی نے آئی سی سی کو بھی تعریف کرنے پر مجبور کر دیا ہے. انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے بلوچستان کے خوبصورت سٹیڈیم کی تصاویر شیئر کیں اور چیلنج کر دیا کہ اگر اس سے زیادہ خوبصورت کوئی میدان ہے تو سامنے لائیں. گوادرکرکٹ سٹیڈیم کا اعزاز میدان کی خوبصورتی نے آئی سی سی کی توجہ بھی حاصل کر لی. انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے ٹویٹر پر سٹیڈیم کی تصاویر شیئر کر دیں. آئی سی سی نے گرؤنڈ کو دلکش قرار دیا. گزشتہ ماہ گوادر میں منعقد ہونے والی کار ریلی نے پوری دنیا کی توجہ حاصل کر لی تھی. ریلی کے شرکاء کے درمیان دوستانہ میچ گوادر سٹیڈیم پر کھیلا گیا۔

گوادر کے کرکٹ سٹیڈیم کے بارے میں ماضی میں ہمیں کافی ساری ایسی نیوز دیکھنے کو ملی ہیں کہ وہاں پہ کوئی انٹرنیشنل سٹینڈرڈ کا کرکٹ سٹیڈیم بنایا جائے گا. لیکن حال ہی میں جس گراؤنڈ میں آپ کو ہر طرف مٹی ہی مٹی دیکھنے کو ملتی تھی. وہاں آج کچھ اس طرح کا منظر ہے

یہ گراؤنڈ صوبہ بلوچستان گوادر میں واقع ہے. یہ گراؤنڈ کچھ اس طرح سے دکھتا تھا اور اب اس گراؤنڈ کو بہت خوبصورتی سے سجایا گیا ہے اور جس طرح کے لائنز آپ کو پی ایس ایل فائیو کے دوران کراچی کے سٹیڈیم میں دیکھنے کو ملی اسی طرح ڈیزائن یہاں بھی کیا گیا ہے. یہ گراؤنڈ پہاڑی میں واقعہ ہے۔ اس کے اردگرد پہاڑہی پہاڑ ہیں لیکن اس جگہ پر ریگستانی زمین ہونے کی وجہ سے یہاں پہ گھاس لگانا سب سے بڑا مسئلہ تھا.
سب سے پہلے سینیٹر صادق سنجرانی نے اپریل 2019 میں اعلان کیا تھا کہ بلوچستان میں دو بڑے بین الاقوامی کرکٹ سٹیڈیم تعمیر کیے جائیں گے. مزید یہ کہا گیا تھا کہ ایک سٹیڈیم کوئٹہ جبکہ دوسرا سٹیڈیم گوادر میں بنایا جائے گا۔ اس گراؤنڈ کا نام سینیٹر اسحاق خان بلوچ کرکٹ سٹیڈیم ہے.

گوادر کے اس علاقے میں ایک کرکٹ سٹیڈیم کے ساتھ ساتھ ایک فٹ بال سٹیڈیم کی بھی منظوری دی گئی. بعد میں اکتوبر 2019 میں میڈیا پر یہ خبر دیکھنے کو ملی کہ اس گراؤنڈ اورساتھ میں فٹ بال سٹیڈیم کے لیے 20 ملین روپے کا اعلان کیا گیا. فٹ بال سٹیڈیم کو بابائے بیزنجو کے نام سے جانا جاتا ہے. اور اسی کے مطابق کرکٹ سٹیڈیم پر بھی کام ہوتا رہا.

اس علاقے کی ریگستانی زمین کی وجہ سے یہاں پہ گھاس لگانا کافی بڑا مسئلہ تھا۔ لیکن جیسے ہی پی ایس ایل 5 ختم ہوا تو اس کے بعد اس سٹیڈیم پر تیزی سے کام ہوا اور ڈویلپمنٹ پاکستان کے آفیشل ٹویٹر اکاؤنٹ پر انہوں نے بتایا کہ اس گراؤنڈ کی گراس کے لیے ٹریٹمنٹ سیوریج واٹر کا سسٹم کیا گیا. جس کے باعث یہ منصوبہ کامیاب ہوا اور آج آپ کو یہاں پہ لش گرین گراس دیکھنے کو مل رہی ہے اور آپ ڈیزائن بھی کلیئرلی دیکھ سکتے ہیں.

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button