Entertainment

عورت کے انتخاب نے سب کو حیران کر دیا

عورت کے انتخاب نے سب کو حیران کر دیا
تحریر : چودھری عرفان الخالق ،،،
سب مال و دولت حاصل کرنے کے لیے بڑھیا عورت نے کس کو منتخب کیا دیکھ کر سب حیران رہ گئے اور اپنے اپنے انتخاب پر پیشماں ہوئےایک مرتبہ کسی ملک کے بادشاہ نے اعلان کروایا کہ فلاں دن سب لوگ ایک بہت اہم اور ضروری کام کے سلسلہ میں ایک بڑے میدان میں اکٹھے ہو جائیں بادشاہ کا حکم تھا تو کون پیچھے رہتا مقررہ دن سب رعایا مقررہ جگہ جو ایک کھلا اور بڑا میدان تھا میں اکٹھے ہو گئے سب نے دیکھا وہاں ہر طرف ہیرےجواہرات پیسا غرض ہر قسم کی چیزیں بھی موجود ہیں.
خیر تھوڑی دیر بعد بادشاہ سلامت تشریف لائیں اور اعلان کیا کہ آج کے دن آپ میں سے جو بھی جس چیز پہ ہاتھ رکھے گا وہ چیز اس کی ہو گی اور وہ گھر لے جا سکتا ہےیہ سننا تھا کہ سب ٹوٹ پڑے اور اپنی پسند کی چیزیں لینے لگےاسی اثنا ایک بڑھیا عورت چلتے چلتے بادشاہ کے قریب پہنچی اور بادشاہ کے کندھے پر ہاتھ رکھ دیا بادشاہ نے بڑھیا کی طرف دیکھا اور کہا اے بڑھیا تو کیا چاہتی ہے تو بڑھیا نے اطمینان سے جواب دیا کہ آپ نے خود اعلان کیا کہ جو جس چیز پہ ہاتھ رکھے گا وہ چیز اس کی تو میں نے بادشاہ پہ ہاتھ رکھا مطلب بادشاہ میرا..
بادشاہ عورت کے انوکھے انتخاب سے حیران تھا بادشاہ بات سمجھ گیا اور سب کو اپنی طرف متوجہ کر کے بڑھیا سے پوچھا کہ تم نے میرا انتخاب کیوں کیا تو بڑھیا نے جواب دیا کہ سب اپنی پسند کی چیزوں کی جانب لپکے اور میں نے چیزیں دینے والے کو حاصل کیا تو سب چیزیں میری ہو جائیں گی اسی طرح انسان دنیا کمانے کے چکر میں اور مختلف چیزوں کے حصول کیلئے دن رات ایک کر دیتا ہے لیکن اس دنیا کو بنانے والے خالق کو چیزیں اور رزق دینے والے رازق کو بھول جاتا ہےاس بڑھیا کی طرح اگر انسان کائنات کے بادشاہ اللہ رب العزت کو اپنا بنا لے تو دنیا میں موجود ہر چیز اس کے قدموں میں ہو گی.
لیکن افسوس کہ انسان بادشاہ کو بھول کر چیزوں کی جانب لپکتا ہےحالانکہ کہ اللہ رب العزت نے انسان کو اپنی عبادت کے لیے پیدا فرمایا اور اللہ انسان کے رزق کا خود ضامن ہےتحریر پسند آئے تو تبصرہ میں ضرور بتائیے گا اور دوستوں میں شئیر فرما دیجیے ہو سکتا ہے کہ کسی کے دل میں اتر جائے یہ بات*اللہ ہم سب کو اپنے احکامات نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے طریقوں پر چل کر پورا کرنے کی توفیق عطا فرمائے آمین ثم آمین یا رب العالمین

Chaudhry Irfan-Ul-Khaliq

یااللہ ہمیں معاف فرما آمین

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button