Entertainment

ہماری تحقیق کا زاویہ

ہماری تحقیق کا زاویہ
تحریر : چودھری عرفان الخالق۔۔۔
ٹرن ٹرن ٹرن موبائل پہ کال آئی تو سلیم نے موبائل جیب سے نکال کر کان سے لگایا
السلام علیکم دوسری جانب جاوید کال پہ تھا
وعلیکم السلام سلیم بھائی ایک بات پوچھنا تھی ابھی ابھی معلوم ہوا ہے کہ سیٹھ اکبر غریبوں میں راشن تقسیم کر رہا ہے
مجھے معلوم نہیں سلیم نے لاعلمی کا اظہار کیا خیر میں معلومات لیتا ہوں
جاوید نے یہ پوچھنے کے لیے کہ واقعی سیٹھ اکبر غریبوں میں راشن تقسیم کر رہا یا افواہ ہے تقریباً 20 دوستوں کو کال کی خوب تحقیق اور جانچ کے بعد معلوم ہوا کہ واقعی سیٹھ اکبر غریبوں میں راشن تقسیم کر رہا ہے اور سیٹھ اکبر کا یہ ماہانہ پروگرام ہوتا ہے خاص مستحق خاندان میں راشن کی تقسیم کا لیکن جاوید دل ہی دل میں کہہ رہا تھا کہ سیٹھ اکبر اور غریبوں میں راشن بات ہضم نہیں ہو رہی

دوسری طرف امجد کو ایک کال آئی اور دوسری جانب سے بتایا گیا کہ سمیر سمگلنگ کرتے پکڑا گیا اور پولیس موقع واردات پہ پہنچ گئی اور سمیر کو گرفتار کر لیا گیا ہے امجد نے جھٹ سے کہا کہ وہ شکل سے ہی ایسا ہے بڑا شریف بنتا تھا اور بڑی نصیحتیں کرتا تھا آج معلوم ہوا کہ وہ کتنا شریف ہے امجد نے سمیر کی اس بات کا خوب چرچا کیا..

یہ دو الگ الگ مکالمے پیش کرنے کا مقصد ہے کہ ہم کتنے عجیب ذہنیت کے مالک ہیں کہ ایک طرف سیٹھ کی نیکی کی بات آئی تو تحقیق اور تصدیق کرنا شروع ہو گئے 20 لوگوں سے معلوم کرنے کے بعد بھی مشکل سے یقین آیا اور دوسری طرف سمیر کی برائی کا معلوم ہوا تو بغیر تحقیق و تصدیق کے یقین کر لیا کہ وہ شکل سے ہی ایسا ہے
جبکہ کسی کی برائی کی تحقیق کرنا چاہیے تاکہ ہم سے پہچاننے میں غلطی نہ ہو جائے اور فضول میں ہم گنہگار نہ ہوں.
اسی لیے کہا گیا ہے کہ سنی سنائی بات پر یقین مت کریں خود تحقیق کر کے یقین کریں
لیکن یہاں تو ہم کسی کی اچھائی کی تحقیق کر لیتے ہیں اور کسی کی برائی کی تحقیق کرنا مناسب ہی نہیں سمجھتے
ہمیں اپنی روش تبدیل کرنے کی ضرورت ہے اور ہر شخص کے بارے اچھے خیالات اور الفاظ استعمال کرنے ہوں گے تاکہ ہمارے بارے بھی لوگ اچھے الفاظ استعمال کریں
اللہ ہمیں سیدھے راستے پر چلنے کی توفیق عطا فرمائے آمین ثم آمین

Chaudhry Irfan-Ul-Khaliq

یااللہ ہمیں معاف فرما آمین

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button