Islamic

وہ کون سا قیمتی ہیرہ جو سب کے پاس ہے

کسی زمانے میں ایک غریب مزدور کو کہیں سے ایک بہت ہی قیمتی ہیرہ مل گیا ہیرہ پا کر مزدور خوشی سے نہال ہو گیا اور مختلف قسم کے خواب اپنی آنکھوں میں دیکھنے لگا، مزدور وہ ہیرہ بیچنے کی غرض سے لے کر جوہری کے پاس گیا جوہری نے ہیرا دیکھا تو اس کی آنکھیں کھلی کی کھلی رہ گئیں اور کہا کہ بھائی میں اس ہیرے کی قیمت دینے سے قاصر ہوں میں تو چھوٹا موٹا جوہری ہوں یہ خریدنا میرے بس میں نہیں تم ایسا کرو یہ کسی بڑے جوہری کے پاس لے جاؤ مزدور وہ ہیرہ لے کر چلتا بنا

راستہ میں اسے کسی نے کہا کہ تم یہ ہیرہ بادشاہ کے پاس لے جاؤ وہ ہی اس کی قیمت ادا کر سکے گا یہ سن کر مزدور بادشاہ کے محل کی طرف چل پڑا. محل میں پہنچ کر بادشاہ کو ہیرہ دکھایا گیا بادشاہ نے اپنے وزیر سے اس کی قیمت لگانے کو کہا وزیر نے کہا کہ بادشاہ سلامت اس ہیرے کی قیمت آپ کی بادشاہت سے بھی زیادہ ہے بادشاہ نے کہا کہ یہ ہیرہ مجھے ہر حال میں چاہیے وزیر نے مزدور کو کہا کہ تم کل صبح آ جانا اور سورج نکلنے سے لے کر سورج غروب تک تم محل سے جو کچھ لے جا سکتے ہو لے جانا کل پورا دن تم کو کسی چیز سے کوئی نہیں روکے گا دوسرے دن مزدور صبح محل میں پہنچ گیا اندر جانے سے اس کو کسی نے نہیں روکا مزدور جب پہلے کمرے میں داخل ہوا تو بہت ہی قیمتی لباس لٹکے ہوئے دیکھے تو مزدور ان میں اپنی پسند کے لباس دیکھنے لگا کبھی کوئی لباس پہنتا اور آئینے کے سامنے کھڑا ہو کر دیکھتا اسی طرح لباس پسند کرتے اس نے کافی وقت گزار دیا دوسرے کمرے میں داخل ہوا تو مختلف اقسام کے کھانے موجود تھے اس نے سوچا کہ کچھ کھا پی لوں رات کا بھوکا مزدور کھانے پہ ٹوٹ پڑا تیسرے کمرے میں گیا تو بہت ہی اعلیٰ قسم کا بستر پایا دیکھنے کی غرض سے اس پہ بیٹھا تو سوچا تھوڑا آرام کر لوں اور سو گیا

جب اسکو جگایا گیا تو سورج غروب ہو چکا تھا وہ جلدی جلدی سامان اٹھانے لگا تو وزیر نے کہا کہ اب تم کچھ نہیں لے جا سکتے کیونکہ تم کو جو وقت دیا تھا وہ ختم ہو چکا تم نے دیئے گئے وقت کو کھانے پینے سونے اور لباس میں ضائع کر دیا کم عقل اتنا قیمتی ہیرہ بھی کھو بیٹھا اور حاصل بھی کچھ نہ کر سکا وہ چاہتا تو پہلے سامان نکالتا پھر کھانے پینے آرام کی طرف توجہ دیتا یہ ہی مثال ہماری زندگی کی ہے زندگی ایک انمول ہیرہ ہے اور ہم اس ہیرہ کی قدر خود نہیں کر رہے ہمیں بھی موت تک کا وقت دیا گیا ہے جس کا وقت مقرر نہیں اور اس دنیا نما محل میں داخل کیا گیا ہے ایسا نہ ہو کہ ہم لباس کھانے اور آرام میں مشغول رہیں اور موت کا فرشتہ آ جائے اور ہمیں کہے کہ تمہارا وقت ختم ہو چکا اب تم کچھ نہیں لے جا سکتے یہ ہم پہ منحصر ہے کہ ہم اس دنیا نما محل سے آخرت کے اپنے حقیقی گھر کے لیے سامان اکٹھا کرتے ہیں یا لباس کھانے پینے اور آرام میں اپنا قیمتی ہیرہ زندگی کی تباہی کے ساتھ آخرت کے لیے بھی کچھ حاصل نہ کر سکیں لہٰذا یہ جو قیمتی ہیرہ ہمیں ملا ہے اس کی قدر کریں اس قیمتی ہیرے کو اللہ نے جنت کے عوض خرید رکھا ہے ہم کل قیامت کے دن ایسا نامہ اعمال لے کر جائیں جس سے ہمیں اللہ رب العزت کے سامنے شرمندگی نہ ہو اللہ ہمیں آخرت کی فکر نصیب فرمائے آمین ثم آمین

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button